تازہ ترین

گلگت: حق ملکیت گلگت بلتستان کے عوام کے لئے بھٹو شہید کا تحفہ ہے اس کا ہر حال میں تحفظ کرینگے، امجد ایڈوکیٹ

گلگت : پھسوٹائمزاُردُو :خصوصی رپورٹر

گلگت : پی پی پی گلگت بلتستان کے صدر امجد ایڈوکیٹ نے حق حاکمیت و ملکیت کے حوالے سیمنعقدہ جلسے سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ اج تحریک ملکیت و حق حاکمیت کا چوتھا عظیم الشان میں منعقد کررہے ہیں اج کا یہ جلسہ بلاول بھٹو زرداری اور قومی قائدین کی وجہ سے اس کی افادیت میں بے پناہ اضافہ ہوا ہے اج عوام کا اس میں شرکت کرکے اس تحریک کا حمایت کا اعلان کیا ہے گلگت بلتستان کے غیور عوام پر اپ کے نانا بھٹو کا بے شمار احسانات ہیں قائد عوام بھٹو نے نہ صرف اپنی زمہ داریاں نھبائی بلکہ بے شمار احسانات کئے سال 2015میں حق ملکیت اور حق حاکمیت کا اغاز کیا اس جلسے میں بھی عوام نے حمایت کیا اور اج ثابت کیا کہ گلگت بلتستان کے عوام اس تحریک کے ساتھ ہے یہ سوچ شہید بھٹو نے دیا ہے جو ہم سے کوئی نہیں چھین سکتا ہے۔شہید بھٹو نے پی پی کی بنیاد رکھی اور اس کا اثر جی بی تک پہنچا تو کراچی میں بھٹو سے ملاقات کی اور گلگت بلتستان کے مسائل کے اوپر بریفنگ دی جب بھٹو حکومت میں ائے تو وہ گلگت بلتستان ائے اور نوجوانوں سے جو وعدہ کیا تھا اس کو پورا کردیا۔بھٹو شہید نے ایف سی ار جبری مشقت راجگی نظام کا خاتمہ کیا بنیادی سیاسی جمہوری اور انسانی حقوق دیئے شہید بھٹو سے قبل یہاں ظلم کا نظام تھا یہ جو نظام تھا اس وقت گلگت بلتستان کے عوام کو حق ملکیت اور حاکمیت کا حق دیا۔یہی وہ نظریہ ہے جس کو اج تک لے کر چل رہے ہیں اور اس کو کسی صورت نہیں چھوڑیں گے جب بی بی شہید کی حکومت ائی تو لیگل فریم ورک ارڈر کے زریعے سیاسی نظام دیا اور ووٹ کا حق دیا ۔بھٹو نے جو حقوق دیئے ان کو 1979میں امر ضیاء الحق نے ختم کیا اس امر نے خالصہ سرکار کو نافذ کیا ہم اس قانون کو کسی صورت نہیں مانتے ہیں امر مشرف دیامر بھاشا ڈیم کے لئے زمینیں چھننا چاہتے تھے لیکن پی پی کی حکومت ائی اور دیامر بھاشا ڈیم میں عوام کو معاوضہ دیا ۔اور زمینوں کا ریٹ مقرر کیا۔جب وفاق اور صوبے میں پی پی کی حکومت تھی ہم نے کبھی بھی خالصہ سرکار کو کبھی قبول نہیں کیا خالصہ سرکار کے باوجود ہم نے ایک لاکھ چوبیس ہزار کنال زمین کا معاوضہ دیا جب سی پیک ایا تو سی پیک کے لئے دس ہزار کنال زمین کو عوام سے چھینی گئی جس پر ہم نے عوام کے مفادات کے خاطر اس تحریک کو شروع کیا اج کوئی کی مائی کا لال خالصہ سرکار تصور نہیں کر سکتا۔حق ملکیت گلگت بلتستان کے عوام کے لئے بھٹو شہید کا تحفہ ہے اس کا ہر حال میں تحفظ کرینگے جناب چیرمین ہم اپ سے وعدہ کرتے ہیں ہم گلگت بلتستان کے ایک ایک فرد کے حق ملکیت کا تحفظ کرینگے حق حاکمیت شہید بھٹو کا ویثزن ہے بھٹو شہید نے جو کمیٹی بنائی تھی اس نے ائینی صوبے کا عزم کیا تھا اس کا تحفظ کرینگے سابقہ ن لیگ کی حکومت میں ایک کیمٹی بنی سرتاج عزیز کی سربراہی میں جو سفارشات بجھوائی تھی سرتاج عزیز نے بھٹو کے سفارشات کو ہی مرتب کیا اس کمیٹی میں تمام اداروں کی نمائندگی تھی لیکن میاں نواز شریف کی بد قسمتی جو اس نے دھوکہ کیا تھا اسی وجہ سے پانامہ میں پھنس گیا اور اس رپورٹ کو سرد خانے میں ڈالا اور اج یہ معاملہ سپریم کورٹ اف پاکستان میں ہے دو دفعہ سپریم کورٹ نے عمران نیازی کی حکومت کو بلایا لیکن وہ بہانے بنا رہے ہیں اور سپریم کورٹ کے کام میں تاخیر کرنا چاہتے ہیں عمران خان چیف جسٹس کی مدت ملازمت کوختم ہونے کا انتظارکررہے ہیں ہم سمجھتے ہیں گلگت بلتستان کے غیور عوام بے وقوف نہیں ہے اس عمران نیازی کی حکومت سے جی بی کو کوئی حقوق نہیں مل سکتے ہیں۔اب ہمیں خوفزدہ ہونے کی ضرورت نہیں جو ویثزن دیا اج بلاول بھٹو جیسا لیڈر دیا اب یہ تحریک ہم اپنے چیرمین بلاول بھٹو کے قیادت میں اگے لے کر چلے گے اور ہر حال میں حق حاکمیت اور ملکیت لے کر رہینگے۔

About Passu Times

ایک تبصرہ

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.

*

error: Content is protected !!