تازہ ترین

اسلام آباد : سپریم کورٹ میں گلگت بلتستان کے حقوق سے متلعق کیس پر 22 لاکھ عوام اور تمام سیاسی جماعتوں کو ایک پیج پر کھڑے ہونے کی ضرورت ہے. قائد حزب اختلاف گلگت بلتستان کیپٹن ریٹائرڈ محمد شفیع

اسلام آباد : پھسو ٹائمز اردو : ابرار حسین استوری

اسلام آباد : قائد حزب اختلاف گلگت بلتستان کیپٹن ریٹائرڈ محمد شفیع نے سپریم کورٹ آف پاکستان میں گلگت بلتستان کے حقوق اور دائرہ اختیار سے متعلق کیس میں شرکت کے بعد سپریم کورٹ کے باہر میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا یہ کیس کسی ایک فرد کا نہیں بلکہ 22 لاکھ گلگت بلتستان کی ستر سالہ محرومیوں کا ہے اس لئے ہم اب کو ایک پیج پر آکر کیس کی پیروی کرنی پڑے گی

تفصیلات کے مطابق سپریم کورٹ گلگت بلتستان کیس کی سماعت میں حزب اختلاف گلگت بلتستان کیپٹن ریٹائرڈ محمد شفیع، تحریک انصاف کے رہنما محبوب علی عباس، گلاب شاہ، ایڈووکیٹ سمیع، ایڈووکیٹ محمد حفیظ، ایڈووکیٹ فدا حسین عباسی، ایڈوکیٹ اسد عباس ، گلگت بلتستان بار کونسل کے وکلاء سمیت بڑی تعداد میں گلگت بلتستان کی شخصیات سپریم کورٹ میں پہنچے تھے.

کیس کی سماعت کے بعد سپریم کورٹ کے باہر میڈیا سے گفتگو کرتے کیپٹن ریٹائرڈ محمد شفیع ، محبوب علی عباس سمیت دیگر نے کہا کہ گلگت بلتستان ستر سال سے محروم ہے اور ان محرومیاں کا حل لازمی ہے. چیف جسٹس ثاقب نثار نے اپنے دورہ گلگت بلتستان پر عوام سے واعدہ کیا تھا کہ وہ انہیں انصاف دینگے اور اسی کو مدنظر رکھتے ہوئے چیف جسٹس نے اس اہم کیس میں سماعت کی اور اج 7 رکنی لاجر بینچ تشکیل دے کر گلگت بلتستان کی عوام کے دل جیت لئے.

چیف جسٹس کی کاوشوں کی وجہ سے گلگت بلتستان کی عوام کو نئی امید کی کرن نظر آئی ہے انشاءاللہ بہت جلد گلگت بلتستان کی ستر سالہ محرومیوں کا ازالہ ہوگا. قائد حزب اختلاف کیپٹن ریٹائرڈ محمد شفیع نے ایک سوال کے جواب میں کہا کہ بدقسمتی سے گلگت بلتستان کے لوگ آپس سیاسی اور علاقائی سطح پر تقسیم ہیں اور اتنا بھی نہیں کہ سپریم کورٹ میں آکر اس اہم کیس کو دیکھیں. یہ کیس کای ایکبکا نہیں ہم سب کا مشترکہ ہے اس لئے ہم سب کو ملکر اس کیس کی پیروی کرنے اور اس اہم معاملے پر توجہ دینے کی ضرورت ہے.

About Passu Times

ایک تبصرہ

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.

*

error: Content is protected !!