تازہ ترین

دیامر میں نامعلوم دہشت گردوں نے ایک درجن سے زائد تعلیمی اداروں پرپیٹرول چھڑک کر آگ لگا دی اور کئی سکولوں کو بارودی مواد سے اُڑا دیا

چلاس۔: پھسو ٹائمز اُردو: بیورورپورٹ

دیامر میں نامعلوم دہشت گردوں نے ایک درجن سے زائد تعلیمی اداروں پرپیٹرول چھڑک کر آگ لگا دی اور کئی سکولوں کو بارودی مواد سے اُڑا دیا ۔تفصیلات کے مطابق گزشتہ شب شرپسندوں نے دیامر کی تینوں تحصیلوں چلاس ،داریل اور تانگیر میں قائم 11گرلز سکولوں اور 2 زیر تعمیر آرمی پبلک سکولزکو بیک وقت نشانہ بنایا اور عمارتوں میں گھس کر توڑ پھوڑ بھی کی اور املاک کو سخت نقصان پہنچایا،آگ لگنے اور بارودی مواد پھٹنے سے تمام تعلیمی ادارے مکمل طور پر تباہ ہوگئے ہیں ۔دہشت گردوں نے دیامر کی تحصیل داریل میں 7سکولوں میں آگ لگائی ،تحصیل تانگیر میں ۳ سکولوں پر پیٹرول چھڑک کر آگ لگائی گئی جبکہ تحصیل چلاس میں ۴ سکولوں کو آگ لگا کر بارودی مواد سے اُڑایا گیا ہے۔دہشت گردوں اور شرپسندوں کی جانب سے دیامر کے مختلف علاقوں میں آگ اور بارودی مواد سے اُڑائے جانے والے سکولوں میں آرمی پبلک سکول داریل،گرلز پرائمری سکول تبوڑ بالا،گرلز مڈل سکول گیال داریل،گرلز پرائمری سکول منیکال پائن داریل،گرلز پرائمری سکول منیکال تبوڑ پائن داریل،سیپ سکول ڈوڈیشال داریل،مڈل سکول کھنبری داریل،آرمی پبلک سکول تانگیر،سیپ پرائمری سکول گلی بالا ،گرلز پرائمری سکول رونئی،گرلز پرائمری سکول بونر نالہ،گرلز سکول ہڈوراور گرلز سکول تھور سری شامل ہیں ۔دیامر کی تحصیل تانگیر میں رات کے پہر1بجے کے قریب جب دہشت گردوں نے زیر تعمیر آرمی پبلک سکول میں گھسنے کی کوشیش کی تو سکول تعمیر کرنے والے ٹھیکدار کے چوکیدار سوال خان نے دہشت گردوں پر فائرنگ کھول دی اُس کے بعد چوکیدار اور شرپسندوں کے مابین فائرنگ کا تبادلہ بھی ہوا ، فائرنگ کے دوران نے کچھ شرپسندوں نے سکول کو آگ بھی لگا دی اور سکول کو جزوی نقصان بھی پہنچا ہے ،فائرنگ کے بعد شرپسند سکول کومکمل طور پر آگ لگانے میں کامیاب نہیں ہوسکے ،البتہ فائرنگ کے تبادلے کے دوران سکول کی کھڑکیاں اوردروازے ٹوٹ چکے ہیں ۔سیکورٹی ذرائع کا کہنہ ہے کہ آرمی پبلک سکول تانگیر کے احاطے میں خون کے دھبے دیکھنے کو ملے ہیں ،خون کے دھبوں سے اندازہ ہوتا ہے کہ فائرنگ کے تبادلے کے دوران کوئی نہ کوئی شرپسند ضرور زخمی ہوگیا ہے،لیکن اس حوالے سے وثوق کے ساتھ کوئی بات کہنا قبل از وقت ہوگا۔شرپسندوں نے تحصیل چلاس اور داریل میں منظم انداز میں دہشت گردی کرنے کے بعد تمام تارگٹڈ سکولوں کو نشانہ بناکر آسانی کے ساتھ فرار ہونے میں کامیاب ہوگئے ہیں ۔واقعے کی اطلاع ملنے کے بعدپاک آرمی نے داریل اور تانگیرمیں ہیلی کاپٹر کے ذریعے فضائی نگرانی کی۔ادھر دیامر سے پولیس کی بھاری نفری متاثرہ علاقوں کی طرف روانہ ہوچکی ہے اور ضلع دیامر کے داخلی اور خارجی راستوں پر ناکہ بندی کرکے چکینگ اور تلاشی کا سلسلہ شروع کیا ہے،اور دیامر کے تمام تعلیمی اداروں کا سیکورٹی بڑھا دیا گیا ہے۔تعلیمی اداروں پر حملوں کے بعد چلاس میں ڈی سی کی سربراہی میں سیکورٹی اداروں کی اہم میٹنگ ہوئی ہے ،جس میں فیصلہ کیا گیا ہے کہ تعلیمی اداروں پر حملہ کرنے والے دہشت گردوں کو ہر صورت گرفتار کیا جائیگا۔

About Passu Times

ایک تبصرہ

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.

*

error: Content is protected !!