تازہ ترین

شمشال: راوں سال اگست تک عطاء آباد جھیل سے تین گناہ زیادہ پانی شمشال فئیرثراف گلیشئرمیں جمع ہونے کا امکان، پھٹنے کی صورت میں گلگت بلتستان سمیت پورے ملک میں تباہی پھیل سکتی ہے

شمشال: گلیشئرز کی وجہ سے عارضی جھیل بننے کا منظر – تصویر رحمت اللہ بیگ – پھسو ٹائمز

شمشال – گوجال: پھسو ٹائمزاُردُو : رحمت اللہ بیگ

 شمشال: راوں سال اگست تک عطاء آباد جھیل سے  تین گناہ زیادہ پانی شمشال فئیرثراف گلیشئرمیں جمع ہونے کا امکان، پھٹنے کی صورت میں گلگت بلتستان سمیت پورے ملک میں تباہی پھیل سکتی ہے، حکومت فوری طور پر عارضی طور پر وجود آنے والے پانی کو واگزار کریں بصورت دیگرگلوف کے باعث خوفناک تباہی پھیل سکتی ہے۔ نمائندہ پھسوٹائمز کی خصوصی سروئے رپورٹ میں خوفناک انکشاف۔

وادی شمشال سے نمائندہ پھسو ٹائمز کے مشاہداتی سروئے رپورٹ کے مطابق گلگت بلتستان کے ضلع ہنزہ کی تحصیل گوجال میں واقع  وادی شمشال میں زمانہ بدنام گلیشئرز  فئیرژراف اور خوردوپن گلیشئرکے آپس میں ملاپ کے باعث پانی کا اخراج عارضی طور پربند ہو گیا ہے اگر گرمیوں میں پانی کا اخراج نہیں کیا گیا تو عطاآباد سے تین گناہ پانی گلوف کی صورت میں پورے علاقے کا نقشہ ہی بدل دے گا، مشاہداتی سروئے میں انہوں مزید کہا ہے کہ گزشتہ سال اگست میں عالمی عدت کی وجہ سے جھیل میں پانی کا مقدار کم تھا جو اگست میں پھٹ جانے سے چھوٹے پیمانے پر تباہی پھیلائی تھی مگرگزشتہ دنوں کے دوبارہ سروئے کے بعد یہ دیکھا گیا کہ ان دونوں گلئشئرز کے ملاپ کی وجہ سے پانی کے زخائر پہلے کی نسبت تین گناہ زیادہ ہو گئی ہیں، جو ائڈروجن بم سے کم نہیں  اسلیئے بغیر تاخیر کے حکومت پاکستان، حکومت گلگت بلتستان، فوکس، این ڈی ایم اے اور این ڈی پی فوری طور پر ماہرین کی ٹیم کے ہمراہ بھاری مشینری علاقے میں پہنچا کر جمع شدہ پانی کو وا گزار کریں بصورت دیگر ہر طرف تباہی ہوگی۔

خیال رہے کہ فیئرژراف گلیشئر ماضی میں کئی اپنے تباہی کے آثار گلگت بلتستان سے لے کر اٹک پُل تک چھوڈ چکے ہیں۔ پھسو ٹائمز نےماضی میں بھی اس سنگین مسائل کی نشاندہی کی تھی جس کے بعد فوکس، افواج پاکستان اور پی ایم ڈی نے علاقے کا دورہ کیا تاہم تاحال کوئی عملی اقدام نہیں اٹھارہی تمام  قصے ہوائی جائزہ  پر ختم ہوجاتے ہیں ۔ 

About Passu Times

One comment

ایک تبصرہ

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.

*

error: Content is protected !!